زبان کا انتخاب
همارے ساتھ رهیں...
مقالوں کی ترتیب جدیدترین مقالات اتفاقی مقالات زیادہ دیکھے جانے والے مقالیں
■ سیدعادل علوی (24)
■ اداریہ (14)
■ حضرت امام خمینی(رہ) (7)
■ انوار قدسیہ (14)
■ مصطفی علی فخری
■ سوالات اورجوابات (5)
■ ذاکرحسین ثاقب ڈوروی (5)
■ ھیئت التحریر (14)
■ سید شہوار نقوی (3)
■ اصغر اعجاز قائمی (1)
■ سیدجمال عباس نقوی (1)
■ سیدسجاد حسین رضوی (2)
■ سیدحسن عباس فطرت (2)
■ میر انیس (1)
■ سیدسجاد ناصر سعید عبقاتی (2)
■ سیداطہرحسین رضوی (1)
■ سیدمبین حیدر رضوی (1)
■ معجز جلالپوری (2)
■ سیدمہدی حسن کاظمی (1)
■ ابو جعفر نقوی (1)
■ سرکارمحمد۔قم (1)
■ اقبال حیدرحیدری (1)
■ سیدمجتبیٰ قاسم نقوی بجنوری (1)
■ سید نجیب الحسن زیدی (1)
■ علامہ جوادی کلیم الہ آبادی (2)
■ سید کوثرمجتبیٰ نقوی (2)
■ ذیشان حیدر (2)
■ علامہ علی نقی النقوی (1)
■ ڈاکٹرسیدسلمان علی رضوی (1)
■ سید گلزار حیدر رضوی (1)
■ سیدمحمدمقتدی رضوی چھولسی (1)
■ یاوری سرسوی (1)
■ فدا حسین عابدی (3)
■ غلام عباس رئیسی (1)
■ محمد یعقوب بشوی (1)
■ سید ریاض حسین اختر (1)
■ اختر حسین نسیم (1)
■ محمدی ری شہری (1)
■ مرتضیٰ حسین مطہری (3)
■ فدا علی حلیمی (2)
■ نثارحسین عاملی برسیلی (1)
■ آیت اللہ محمد مہدی آصفی (3)
■ محمد سجاد شاکری (3)
■ استاد محمد محمدی اشتہاردی (1)
■ پروفیسرمحمدعثمان صالح (1)
■ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری (1)
■ شیخ ناصر مکارم شیرازی (1)
■ جواہرعلی اینگوتی (1)
■ سید توقیر عباس کاظمی (3)
■ اشرف حسین (1)
■ محمدعادل (2)
■ محمد عباس جعفری (1)
■ فدا حسین حلیمی (1)
■ سکندر علی بہشتی (1)
■ خادم حسین جاوید (1)
■ محمد عباس ہاشمی (1)
■ علی سردار (1)
■ محمد علی جوہری (2)
■ نثار حسین یزدانی (1)
■ سید محمود کاظمی (1)
■ محمدکاظم روحانی (1)
■ غلام محمدمحمدی (1)
■ محمدعلی صابری (2)
■ عرفان حیدر (1)
■ غلام مہدی حکیمی (1)
■ منظورحسین برسیلی (1)
■ ملک جرار عباس یزدانی (2)
■ عظمت علی (1)
■ اکبر حسین مخلصی (1)

جدیدترین مقالات

اتفاقی مقالات

زیادہ دیکھے جانے والے مقالیں

مواعظ ونصائح 2۔مجلہ عشاق اہل بیت 2۔ محرم،صفر ، ربیع الاول ۔1415ھ

1۔ خداوند عالم نے فرمایا:۔ "قل انما اعظکم بواحدۃ ان تقوموا للہ مثنی وفرادی"
ترجمہ:اے پیغمبرآپ کہہ دیجئے کہ میں تمہیں صرف اس بات کی نصیحت کرتاہوں کہ اللہ کیلئے ایک ایک دو دو کرکے قیام کرو۔
2۔ رسول نے فرمایا:۔" یاعلی ثلاث خصال من مکارم الأخْلاقِ : تُعطِيَ مَن حَرمَكَ وتَصِلَ مَن قَطعَكَ ، و تَعْفوَ عَمَّن ظَلمَكَ"

ترجمہ: اے علی ؑ تین عادتیں حسن اخلاق میں سے ہیں۔اپنے اہل خاندان کوعطا اورجو تم سے قطع رحم کرے اس سے صلہ رحم کرو،اورجس نے تم پرظلم کیاہے اس کومعاف کردو۔
3۔ امیرالمومنین ؑ نے فرمایا:۔ " یاکمیل قل عندکل شدۃ(لاحول ولاقوۃ الاباللہ)تکفھاوقل عندکل نعمۃ(الحمدللہ)تزددمنھا واذا ابطات الارزاق علیک فاستغفراللہ یوسع علیک فیھا"
ترجمہ:ائے کمیل ہرمصیبت کے وقت لاحول ولاقوۃ الاباللہ(خداکے علاوہ کوئی قدرت اورطاقت نہیں)کہو توتم اس مصیبت سے بچ جاؤگے،اورہرنعمت کے ملتے ہی الحمدللہ کہوتو اس میں زیادتی ہوگی اورجب تم پررزق کی تنگی ہوتوخداکے سامنے استغفارکرو تو وہ رزق کو تمہارے لئے زیادہ کردے گا۔ ... باقی مطلب

فلسفہ توحید(پہلی قسط)۔مجلہ عشاق اہل بیت 1۔ شوال ،ذی الحجہ 1414 ھ

افی اللہ شک؟ کیا وجودخدامیں کوئی شک ہے؟ ہرگز نہیں۔

اس لئے کہ اثبات صانع عالم پرقطعی دلائل وعقلی براہین کافی ہیں ۔اوروجودخداومعرفت توحیدکیلئے انفاس خلائق کی آمدوشد کی تعداد کے مثل ادلہ وطرق معرفت پائے جاتے ہیں۔ ... باقی مطلب

فلسفہ توحید(دوسری قسط)۔مجلہ عشاق اہل بیت2۔محرم،صفر ،ربیع الاول ۔1415ھ

پہلے شمارہ میں فلسفہ توحیدکے سلسلے میں ایک دلیل کو بیان کیا تھا
اب اس شمارہ میں ہم بقیہ دوسری دلیلوں کوپیش کررہے ہیں۔
2۔ دلیل حدوث :مسلک متکلمین: یہ ہے کہ موجود کوحادث ہونے کے اعتبار سے لحاظ کیاجائے اوراس طرح دلیل قائم کی جائےکہ" العالم متغیرباالبداھۃ"عالم بدیہی طورپر تغیرپذیرہے۔"کل متغیرحادث"ہرمتغیرحادث ہے اس لئے ہرحادث یامسبوق بہ غیرہے یامسبوق بہ عدم پس نتیجہ یہ ظاہر ہواکہ عالم حادث ہے۔
3۔ دلیل حرکت :روش طبیعین۔وہ یہ ہے کہ موجود کوجسم اورمتحرک ہونے کے اعتبارسے دیکھاجائے۔ ... باقی مطلب

فلسفہ توحید(تیسری قسط)۔مجلہ عشاق اہل بیت 3۔ربیع الثانی،جمادی الاول، جمادی الثانی ۔1415ھ

جب ہم اللہ کو خالق کون ومکاں ،نظم دہندہ کائنات ،حکمت وتدبر سے ہم آہنگ مربی تسلیم کرچکے ہیں تو ضروری کہ اس کائنات میں اس کی ایجادات وتخلیقات کے اس صفات سے بھی واقف ہوں کہ جو اس کے مخزن علم وحکمت سے کشف ہوتے ہیں۔
اس عظیم کائنات کے عمق میں کچھ طاقتیں جو تعجب خیز ومحیرالعقول ہیں وہ ہدایت ہیں اس بات کی طرف اللہ کی قدرت واختیار کے پیش نظر غیر ممکن ومحال نہیں ،ہرشئی جس میں بوئے حیات اوراحساس وادراک کا تصور پایا جاتاہے وہ سب ایک ایسے مبداحیات کی طرف منتہی ہیں جو باالذات "حی اورقیوم " ہے جس طرح وحدت نظام عالم یعنی کائنات کاایک ڈھرے پرچلنادن ورات کاایک اسلوب پر حرکت کرنااشارہ ہے ایک ایسے خالق کی طرف جو واحد اورلاشریک ہے۔خداوندعالم تمام صفات کمالیہ سے متصف ہے اور وہ صفات اس کی ذات میں داخل ہیں، خارج ازذات ہو کر نہیں پائے جاتے اس لئے کہ اگر صفات کوزائد برذات تسلیم کرلیاجائے تو تعدد قدماء لازم آئے گا جس کابطلان سابق میں گزرچکا ہے جیسے قدرت ،علم اورحیات۔ پس اس کی قدرت عین حیات ہے اورحیات عین قدرت ہے اگر چہ یہ الفاظ معانی ومفاہیم کے اعتبار سے مختلف ہیں لیکن حقائق و واقعیت کے لحاظ سے متحدہیں۔ ... باقی مطلب

فلسفہ توحید(چوتھی قسط)۔مجلہ عشاق اہل بیت 4۔رجب ،شعبان، رمضان ۔1415ھ

صفات ثبوتیہ

فہوسبحانہ وتعالیٰ قادر۔ وہو عالم۔ انہ حی ۔ انہ مرید۔

انہ مدرک۔ انہ قدیم ۔ انہ متکلم صادق ... باقی مطلب

صحیفہ نورسے اقتباس۔مجلہ عشاق اہل بیت 3۔ ربیع الثانی،جمادی الاول، جمادی الثانی ۔1415ھ

"صحیفہ نور"(وصیتنامہ حضرت امام خمینی قدس سرہ )سے”اقتباس”
بہرصورت میری وصیت یہ ہے کہ ہرزمانہ میں خاص طور پر اس زمانہ میں جبکہ دشمن کی چالوں اورسازشوں میں تیزی وقوت آگئی ہے، دینی تعلیم کے مراکز (حوزہ)کومنظم بنانالازم وضروری ہے،عظیم الشان افاضل ، مدرسین اورعلماء اپناوقت صرف کرکے صحیح اورجامع وکامل منصوبہ بناکر دینی تعلیمی مراکز خاص طور سے حوزہ علمیہ قم اوردیگر بڑے اوراہم مراکز کی اس نازک دور میں خطرات سے حفاظت کریں۔ ... باقی مطلب

سلام۔ مجلہ عشاق اہل بیت 2۔ محرم،صفر ، ربیع الاول ۔1415ھ

گزرگئے تھے کئی دن کہ گھر میں آب نہ تھا

مگر حسینؑ سے صابرکواضطراب نہ تھا

انیس عمر بسرکردو خاکساری میں

کہیں نہ یہ کہ غلام ابوتراب ؑنہ تھا ... باقی مطلب

نبوت(ساتویں قسط)۔مجلہ عشاق اہل بیت 7۔محرم ،صفر، ربیع الاول ۔1415ھ

نبوت اصول دین اور ارکان دین میں سے ہے،نبوت کے سلسلہ میں دوطریقوں سے بحث کی جاتی ہے، پہلانبوت عامہ ،دوسرا نبوت خاصہ

جس میں یہ بحث ہو کہ نبوت کسے کہتے ہیں ،لوگوں کے درمیان اسکی کیاضرورت ہے، نبوت کی شرطیں کیاہیں اوراس کی معرفت اورپہچان کے طریقے کیاہیں اسے نبوت عامہ کہتے ہیں۔اور جس میں خاتم النبیّین کی نبوت کے بارے میں ، انکےمعجزات کے بارے میں خاص طور پر قرآن کی بابت گفتگو ہو اس کو نبوت خاصہ کہتے ہیں۔ ... باقی مطلب

شمع خاموش کی تابندگی۔مجلہ عشاق اہل بیت 2۔ محرم،صفر ، ربیع الاول ۔1415ھ

کوشکست ہوتی ہے مگر یہ بھی حقیقت ہے کہ باطل دوبارہ اپنے بدن کی مٹی جھاڑ کردوسرابہروپ بھرکر حق کے مقابل کھڑا ہوجاتارہاہے۔ دوسرے لفظوں میں باطل نئے چہرہ وپیکرکے ساتھ حق کے سامنے آتااورشکست کھانے کے بعد دوسرا چہرہ،دوسرابھیس بدل کرنام ومقام کی تبدیلی کے بعد پھراٹھ کھڑاہوتاتھا۔لیکن سنہ 61ہجری میں امام حسینؑ کے مقابلے میں باطل کاجونمائندہ آیاوہ ایک نہیں ہزارچہرہ رکھتاتھا ۔جس کا غازہ فسق وفجور،فتنہ وفساد،کفرونفاق تھا۔اسلئے آپ ؑ کاموقف ومنصب بھی حق کے نمائندوں میں سب سے بلندتھا۔حسینؑ کوباطل پرایسی ضرب لگانی تھی جواس کے تمام پندار وغرور کوہمیشہ کیلئے ختم کردے ۔ایسی شکست کہ باطل کی کمر ہمیشہ کیلئے ٹوٹ جائے اس کے کروفرکاخاتمہ ہوجائے۔
یہاں یہ بات تعجب انگیز نہیں کہ پیغمبراسلامؐ کی رحلت کے پچاس سال بعدہی ایسا انقلاب کیسے آگیااورآپکے منبر پربندروں کوجگہ دی جانے لگی ۔پیغمبرامن ورحمت عربستان ظلم وجور کی سیاہ آندھیوں کالقمہ بن گیاجاہلیت کے سارے آداب واطوار ترقی یافتہ صورت میں معاشرہ کازیور بن گئے بلکہ حیرت یہ ہے کہ صرف لہو کی دھارسے امام حسینؑ نے اس سیلاب کودفع کیسے کیا۔آپ سے پہلے خون لے یہ تاثیر نہیں پائی تھی۔
نہ وہ ظالم کے سرپرسوار ہوکر اسے جھکاسکاتھا نہ خون نے تیرو ... باقی مطلب

انوار قدسیہ 2۔مجلہ عشاق اہل بیت 2۔ محرم،صفر ، ربیع الاول ۔1415ھ

انور قدسیہ معصومین ؑ کی حیات طیبہ کامختصرتذکرہ
معصوم دوم ۔امیرالمؤمنین علیہ السلام
آپ کانام ونسب :۔ علی ؑ بن ابی طالب بن ہاشم بن عبدالمناف بن قضی بن کلاب بن مرہ بن غالب فہربن مالک بن نضربن کنانہ بن حزیمہ بن مدرکہ بن الیاس بن مضربن نزاربن معدبن عدنان تھا۔
آپ کے مشہورومعروف القاب:۔امیرالمؤمنینؑ ،امام المتقین،اسداللہ الغالب ،یعسوب الدین،ولی اللہ الاعظم ،مرتضیٰ، حیدرکرار۔
آپ کی کنیت :۔ ابوالحسن ،ابوتراب ،ابوزینب ،ابوالحسنین ،ابوالسبطین۔
آپ کے پدربزرگوار:عمران تھے بعض روایات میں بھی ملتاہےکہ آپکے والدکانام عبدمناف اورکنیت ابوطالب(طالب آپ کےبڑے فرزندتھے)تھی اورشیخ البطحیٰ کہلاتے تھے ۔
آپکی والدہ ماجدہ :فاطمہ بنت اسد بن ہاشم بن عبدمناف الی آخرہ۔
یوم ولادت: یوم جمعہ 13رجب سنہ 30 عام الفیل۔
محل تولد: مکہ مکرمہ جوف خانہ کعبہ۔خسرو پرویز کے عہدسلطنت میں کہ جوعجم کے بادشاہ تھے۔پوری عمر 63سال ،مدت امامت 11ہجری سے لیکر29 ہجری تک ۔عام مسلمانوں کے حوالے سے آپکی مدت خلافت بعدخلافت عثمان 4سال 9 مہینہ تھی۔ ... باقی مطلب

سوال بھیجیں