زبان کا انتخاب
همارے ساتھ رهیں...
مقالوں کی ترتیب جدیدترین مقالات اتفاقی مقالات زیادہ دیکھے جانے والے مقالیں
■ سیدعادل علوی (27)
■ اداریہ (14)
■ حضرت امام خمینی(رہ) (7)
■ انوار قدسیہ (14)
■ مصطفی علی فخری
■ سوالات اورجوابات (5)
■ ذاکرحسین ثاقب ڈوروی (5)
■ ھیئت التحریر (14)
■ سید شہوار نقوی (3)
■ اصغر اعجاز قائمی (1)
■ سیدجمال عباس نقوی (1)
■ سیدسجاد حسین رضوی (2)
■ سیدحسن عباس فطرت (2)
■ میر انیس (1)
■ سیدسجاد ناصر سعید عبقاتی (2)
■ سیداطہرحسین رضوی (1)
■ سیدمبین حیدر رضوی (1)
■ معجز جلالپوری (2)
■ سیدمہدی حسن کاظمی (1)
■ ابو جعفر نقوی (1)
■ سرکارمحمد۔قم (1)
■ اقبال حیدرحیدری (1)
■ سیدمجتبیٰ قاسم نقوی بجنوری (1)
■ سید نجیب الحسن زیدی (1)
■ علامہ جوادی کلیم الہ آبادی (2)
■ سید کوثرمجتبیٰ نقوی (2)
■ ذیشان حیدر (2)
■ علامہ علی نقی النقوی (1)
■ ڈاکٹرسیدسلمان علی رضوی (1)
■ سید گلزار حیدر رضوی (1)
■ سیدمحمدمقتدی رضوی چھولسی (1)
■ یاوری سرسوی (1)
■ فدا حسین عابدی (3)
■ غلام عباس رئیسی (1)
■ محمد یعقوب بشوی (1)
■ سید ریاض حسین اختر (1)
■ اختر حسین نسیم (1)
■ محمدی ری شہری (1)
■ مرتضیٰ حسین مطہری (3)
■ فدا علی حلیمی (2)
■ نثارحسین عاملی برسیلی (1)
■ آیت اللہ محمد مہدی آصفی (3)
■ محمد سجاد شاکری (3)
■ استاد محمد محمدی اشتہاردی (1)
■ پروفیسرمحمدعثمان صالح (1)
■ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری (1)
■ شیخ ناصر مکارم شیرازی (1)
■ جواہرعلی اینگوتی (1)
■ سید توقیر عباس کاظمی (3)
■ اشرف حسین (1)
■ محمدعادل (2)
■ محمد عباس جعفری (1)
■ فدا حسین حلیمی (1)
■ سکندر علی بہشتی (1)
■ خادم حسین جاوید (1)
■ محمد عباس ہاشمی (1)
■ علی سردار (1)
■ محمد علی جوہری (2)
■ نثار حسین یزدانی (1)
■ سید محمود کاظمی (1)
■ محمدکاظم روحانی (1)
■ غلام محمدمحمدی (1)
■ محمدعلی صابری (2)
■ عرفان حیدر (1)
■ غلام مہدی حکیمی (1)
■ منظورحسین برسیلی (1)
■ ملک جرار عباس یزدانی (2)
■ عظمت علی (1)
■ اکبر حسین مخلصی (1)

جدیدترین مقالات

اتفاقی مقالات

زیادہ دیکھے جانے والے مقالیں

احیائےقیام امام حسینؑ میں ائمہ(ع) کاکردار۔ مجلہ عشاق اہل بیت 14و 15۔ربیع الثانی 1437 ھ

قرآن مجید میں متعددآیات اس بات پردلالت کرتی ہیں کہ انبیاء الہی کی یادکوزندہ رکھنا،تاریخ میں والامقام شخصیات کےنام اوریادزندہ رکھنےاوران کےعبرت انگیز کردارکوباقی رکھنے کی تاکید کی گئی ہے۔
قرآن مجیدمیں ایسی آیات جن کی ابتداء "وتل علیہم، واذکرفی الکتاب " سےہوتی ہے ہمیں معلوم ہوتاہے کہ خداکے منتخب ہستیوں اوران کے واقعات کویادرکھنے کامقصدیہ نہیں ہےکہ ان کےذاتی مسائل کوبیان کیاجائے بلکہ ان میں اس بات کی طرف اشارہ ہے کہ ان میں موجودنیک صفات اورپسندیدہ خصلتوں کوزندہ رکھناہے۔ ... باقی مطلب

اداریہ۔مجلہ عشاق اہل بیت 14و 15 ۔ ربیع الثانی 1437 ھ

علامہ مجاہد شیخ باقرنمر کی شہادت
"وَسَيَعْلَمُ الَّذِينَ ظَلَمُوا أَيَّ مُنقَلَبٍ يَنقَلِبُونَ "
اورعنقریب ظالموں کو معلوم ہوجائے گا کہ وہ کس جگہ پلٹادئے جائیں گے۔
آیت اللہ نمر 1379 ھ میں مشرقی سعودی عرب کے صوبے قطیف کے شہر عوامیہ میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد علی بن ناصر آل نمر بھی اپنے علاقے کے معروف عالم اور خطیب تھے۔
آپ نے ابتدائی اور ثانوی تعلیم اپنے آبائی شہر عوامیہ میں حاصل کی اس کے بعد وہ دینی علوم کے حصول کی خاطر سن 1400 ھ میں ایران تشریف لائے، دس سال تک یہاں مقیم رہنے کے بعد دمشق کے نواح میں واقع دینی مرکز زینبیہ تشریف لے گئے۔
ایران اور شام میں حصول علم اور تدریس کے بعد سعودی عرب واپس پہنچے اور اپنے آبائی شہر عوامیہ میں دینی علوم کی تدریس اور مذہبی سرگرمیوں میں مصروف ہوگئے ۔ ... باقی مطلب

عصر غیبت میں امام مھدی(عج)کےفوائد۔ مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

عقیدہ مھدویت کے غیرنفسیاتی فوائدکو دو قسموں میں تقسیم کیا جا سکتا ہے:
١): فوائد عامہ:
٢): فوائد خاصہ:
امام مھدی عجل اللہ فرجہ الشریف کے وجود کے فوائدعامہ:
امام مھدی عجل اللہ فرجہ الشریف کے وجودکے بہت سے فوائدعامہ شیعہ وسنی روایات میں ذکر کیے گئے ہیں جن میں سے چند ایک مندرجہ ذیل ہیں۔ ... باقی مطلب

سوالات اور جوابات ۔مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

ال 1: اگر مسلمانوں کے بازار میں موجود اکثر چیزیں یورپی ممالک سے لائی گئی هو یا ایسے اسلامی ممالک سے لائی گئی هوں جو ذبح کے مساله میں شرعی حدود اور احکام کی رعایت نهیں کرتے هیں تو کیا اس بازار میں موجود گوشت میں بھی سوق مسلمین ( مسلمانوں کے بازار ) کا حکم جاری هوگا ؟
جواب 1: سوق مسلمین ( مسلمانوں کے بازار ) کا قاعده مشکوک گوشت کے حلال هونے میں بھی جاری هو گا ( یعنی جب تک آپ کو اس گوشت کے حرام هونے پر یقین نه هو حلال هو گا). ... باقی مطلب

زہد نہج البلاغہ کی نظرمیں۔ مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

مقدمہ: نہج البلاغہ کے موضوعات متنوع ہیں کہ جس میں تقوا، زہد ،توکل ،صبر،خواہشات نفس، طویل امیدیں،ظلم اورطبقاتی نظام سے کنارہ کشی ، احسان ،محبت ،مظلوم اورغریبوں کی حمایت ،استقامت ، طاقت ،شجاعت ، اتحاد واتفاق، اورترک اختلاف کی ترغیب دی گئی ہے اسی طرح تاریخ سے عبرت حاصل کرنا ، تفکروتذکراورمحاسبہ ومراقبہ کی طرف دعوت ،تیزی سے عمرگزرنے کویادکرنااورسکرات موت کے بعدکی سختیاں عالم برزخ کے حالات اورقیامت کے ہولناک دن کی یادہانی کی گئی ہے یہ وہ عناصر ہیں کہ جن کی طرف نہج البلاغہ میں توجہ دی گئی ہے۔مواعظ کے عناصر میں سب سے زیادہ تکرار تقواکی ہوئی ہے تقوا کے بعددوسراعنصرزہدہے کہ جس کی تکرارزیادہ ہوئی ہے زہد ترک دنیاکامترادف ہے اس بات کو مدنظررکھتے ہوئے کہ نہج البلاغہ کی تعبیروں میں زہد اورترک دنیا ایک دوسرے کے مترادف ہیں اسی موضوع پر نہج البلاغہ میں دوسرے تمام موضوعات سے زیادہ بحث ہوئی ہیں نہج البلاغہ میں تقواکے بعد جتنی اہمیت زہد کو دی گئی ہےکسی دوسرے موضوع کو اہمیت نہیں دی گئی ہے زہد کی اس اہمیت کوپیش نظر رکھتے ہوئے ہم بھی اپنی بحث کاآغاز کلمہ زہد سے ہی کرتے ہیں۔ ... باقی مطلب

حضرت فاطمہ(س)اورشوہر داری کےاصول۔مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

ایک ایسا دور جس میں انسانیت کا نام ونشان نہیں تھا اور انسان حیوانی صفت کو اپنانے پر فخر محسوس کرتا تھا عورت کی ذات کو اپنے لئے ذلت ورسوائی سمجھتا تھا ہر طرف ظلم وستم کی تاریکی چھائی ہوئی تھی ایک ایسے دور میں شہزادی دو عالم نےآ کر اس جاہل معاشرے کو سمجھا دیا کہ ایک لڑکی باپ کے لئے زحمت نہیں بلکہ ہر دور میں رحمت ہوا کرتی ہے جو معاشرہ بیٹی کو اپنے لئے باعث ذلت ورسوائی سمجھتا تھا وہ معاشرہ تاریکی میں ڈوبا ہوا تھا جس کو شہزادی دو عالم نے آکر روشن کر دیا۔ ... باقی مطلب

توحیدوشرک سورہ کافرون کےآئینہ میں۔مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

مراتب و اقسام شرک

جس طرح توحید کے مراتب و اقسام ذکر ہوئے اسی طرح شرک کے بھی اقسام اور مراتب پائے جاتے ہیں ’’تعرف الاشیاء باضدادھا‘‘چیزوں کی پہچان ا ن کے متضاد سے ہوتی ہے،تاکہ توحید وشرک دونوں کی پہچان ہوسکے۔ ... باقی مطلب

اہمیت تقویٰ اوراس کااثر۔ مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

یَا أَیُّهَا النَّاسُ إِنَّا خَلَقْنَاکُم مِّن ذَکَرٍ وَأُنثَی وَجَعَلْنَاکُمْ شُعُوبًا وَقَبَائِلَ لِتَعَارَفُوا إِنَّ أَکْرَمَکُمْ عِندَ اللَّهِ أَتْقَاکُمْ "[1]اےلوگو!ہم نے تمہیں ایک مرداورایک عورت سے خلق کیاپھرتمہیں قومیں اورقبیلے بنادیاتاکہ تم ایک دوسرے کوپہچان سکے تم میں سب سے زیادہ مکرم اورمعززاللہ کے نزدیک یقیناًٍٍٍٍوہی ہے جو سب سے زیادہ متقی اورپرہیز گارہو ایک اورمقام پرپیغمبراسلام ﷺ فرماتے ہیں "کن باالعمل باالتقویٰ اشداھتمامامنک بالعمل بغیرہ فانہ لایقل عمل باالتقویٰ وکیف یقل عمل یتقبل ؟ لقولہ تعالیٰ (انمایتقبل اللہ من المتقین)" تقواکے ساتھ عمل انجام دینے کوتقوا کے بغیرعمل انجام دینے پر زیادہ اہمیت دو چونکہ تقواکے ساتھ کوئی بھی عمل کم نہیں ہےکیسے وہ عمل کم حساب ہوگاجوقبول ہونے والاہے کیونکہ اللہ تعالی کافرمان ہے خداوندصرف متقین کے اعمال کوقبول کرتاہے۔ ... باقی مطلب

انوار قدسیه۔مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

دسویں امام ، سلسله عصمت وطهارت کی بارهویں کڑی اور اپنے زمانے میں پیغمبر خدا کے حقیقی جانشین اورخلیفه برحق اورحضرت عیسی حضرت داؤد اور اپنے والد بزرگوار حضرت امام محمد تقی علیهم ا لسلام کے مانند کمسنی میں منصب امامت پر فائز هونے والی هستی حضرت امام علی النقی الهادی هیں آپ (ع) کے والد حضرت امام محمد تقي الجواد عليہ السلام اور آپ کي والدہ ماجدہ کا نام "سيدہ سمانہ" ہے- محمد بن فرج اور علی بن مهزیار کی روایت کے مطابق حضرت امام ھادی علیہ السلام نے اپنی والدہ کے بارے میں فرمایا: میری والدہ میری نسبت عارفہ اور بهشتیوں میں سے تھی، شیطان کبھی بھی اس کے نزدیک نہیں جا سکتا اور جابروں کے مکر و فریب اس تک نہیں پہنچ سکتے، وہ اللہ کی پناہ میں هے جو سوتا نهیں اور وہ صدیقین اور صالحین کی ماؤں کو اپنی حالت پر نهیں چھوڑتا"[1] ... باقی مطلب

اقبال اورمحبت اہل بیت(ع)۔مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

خداوندعالم نے رسول ﷺ کی اطاعت کواپنی محبت کامعیارقراردیاہے ۔"قل ان کنتم تحبون اللہ فاتبعونی یحببکم اللہ ویغفرلکم ذنوبکم واللہ غفوررحیم "[1] اےرسول ﷺ ان لوگوں سے کہہ دو کہ اگر تم خداکو دوست رکھتے ہوتومیری پیروی کروکہ خدا(بھی)تم کو دوست رکھےگا۔اورتمہارے گناہ بخش دےگا، اوراللہ بڑابخشنے والامہربان ہے دوسرے مقام پر اللہ تعالیٰ نے اپنے کلام میں پیغمبرکی اطاعت سے تعبیر کیا ہے۔"من یطع الرسول فقط اطاع اللہ"[2]جس نے رسولﷺ کی اطاعت کی توگویااس نے خداکی اطاعت کی۔
آل محمدعلیہم السلام کی محبت کواجر رسالت قراردیااورتبلیغ رسالت کے اجرکو اداکرنے کا حکم بھی اللہ تعالیٰ نے قرآن مجید میں نازل کیاچنانچہ خداوندارشادفرماتاہے۔"قل لااسئلکم اجراالاالمودۃ فی القربیٰ"[3] اے رسول!تم کہدوکہ میں اس (تبلیغ رسالت)کااپنے قرابتداروں (اہل بیت علیہم السلام)کی محبت کے سواکوئی صلہ نہیں چاہتا۔ ... باقی مطلب

سوال بھیجیں