زبان کا انتخاب
همارے ساتھ رهیں...
مقالوں کی ترتیب جدیدترین مقالات اتفاقی مقالات زیادہ دیکھے جانے والے مقالیں
■ سیدعادل علوی (27)
■ اداریہ (14)
■ حضرت امام خمینی(رہ) (7)
■ انوار قدسیہ (14)
■ مصطفی علی فخری
■ سوالات اورجوابات (5)
■ ذاکرحسین ثاقب ڈوروی (5)
■ ھیئت التحریر (14)
■ سید شہوار نقوی (3)
■ اصغر اعجاز قائمی (1)
■ سیدجمال عباس نقوی (1)
■ سیدسجاد حسین رضوی (2)
■ سیدحسن عباس فطرت (2)
■ میر انیس (1)
■ سیدسجاد ناصر سعید عبقاتی (2)
■ سیداطہرحسین رضوی (1)
■ سیدمبین حیدر رضوی (1)
■ معجز جلالپوری (2)
■ سیدمہدی حسن کاظمی (1)
■ ابو جعفر نقوی (1)
■ سرکارمحمد۔قم (1)
■ اقبال حیدرحیدری (1)
■ سیدمجتبیٰ قاسم نقوی بجنوری (1)
■ سید نجیب الحسن زیدی (1)
■ علامہ جوادی کلیم الہ آبادی (2)
■ سید کوثرمجتبیٰ نقوی (2)
■ ذیشان حیدر (2)
■ علامہ علی نقی النقوی (1)
■ ڈاکٹرسیدسلمان علی رضوی (1)
■ سید گلزار حیدر رضوی (1)
■ سیدمحمدمقتدی رضوی چھولسی (1)
■ یاوری سرسوی (1)
■ فدا حسین عابدی (3)
■ غلام عباس رئیسی (1)
■ محمد یعقوب بشوی (1)
■ سید ریاض حسین اختر (1)
■ اختر حسین نسیم (1)
■ محمدی ری شہری (1)
■ مرتضیٰ حسین مطہری (3)
■ فدا علی حلیمی (2)
■ نثارحسین عاملی برسیلی (1)
■ آیت اللہ محمد مہدی آصفی (3)
■ محمد سجاد شاکری (3)
■ استاد محمد محمدی اشتہاردی (1)
■ پروفیسرمحمدعثمان صالح (1)
■ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری (1)
■ شیخ ناصر مکارم شیرازی (1)
■ جواہرعلی اینگوتی (1)
■ سید توقیر عباس کاظمی (3)
■ اشرف حسین (1)
■ محمدعادل (2)
■ محمد عباس جعفری (1)
■ فدا حسین حلیمی (1)
■ سکندر علی بہشتی (1)
■ خادم حسین جاوید (1)
■ محمد عباس ہاشمی (1)
■ علی سردار (1)
■ محمد علی جوہری (2)
■ نثار حسین یزدانی (1)
■ سید محمود کاظمی (1)
■ محمدکاظم روحانی (1)
■ غلام محمدمحمدی (1)
■ محمدعلی صابری (2)
■ عرفان حیدر (1)
■ غلام مہدی حکیمی (1)
■ منظورحسین برسیلی (1)
■ ملک جرار عباس یزدانی (2)
■ عظمت علی (1)
■ اکبر حسین مخلصی (1)

جدیدترین مقالات

اتفاقی مقالات

زیادہ دیکھے جانے والے مقالیں

دماغی موت کے حامل افراد کے اعضاء کی پیوند کاری۔مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

ماغی موت سے موت کا وقوع :
اس پر ایک اور دلیل
فقہ،میڈیکل سائنس اور عرف عام میں واضح ترین امور میں سے ایک یہ ہے کہ بغیر سر والا انسا ن مردہ ہے اس بارے میں فقہ اورمیڈیکل کے نکتہ نظر میں کوئی فرق نہیں ہے ،جیسا کہ میڈیکل اور عرف عام میں بھی اس بات میں کو ئی اختلاف نہیں ہے ،اس بنا پر اگر فرض کیا جا ئے کہ میڈیکل سائنس سر کے بدن سے جدا ہو نے کے بعد بھی دل کی دھڑکن اور گردش خون کو طبیعی طور پر یا میڈیکل کے آلات کے ذریعے سے جا ری رکھ سکے تو اس انسان کی موت میں کوئی شخص بھی اختلاف نہیں کر ے گا اور کو ئی بھی فقیہ اس پر مو ت کے احکام کے مترتب ہو نے میں شک نہیں کر ے گا اگر چہ دل اپنی دھڑکن اور گردش خون کو جاری رکھا ہو ا ہو،یہ بات فقہ، میڈیکل اور عرف ہر لحاظ سے واضح اور روشن ہے ۔ ... باقی مطلب

انڈونیشیا میں عزاداری کی تاریخ اور رسومات۔ مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

کل یوم عاشوراء و کل ارض کربلاء کی تفسیر انڈونیشیا جیسے بڑے اسلامی ملک میں عزاداری سید الشہداءکے قیام کی صورت میں کئی صدیوں سے دیکھنے کو ملتی ہے ،گرچہ مکان کے اعتبار سے کربلا کی سرزمین اور انڈونیشیا کے ما بین دس ہزار کیلو میٹر سے زیادہ کا فاصلہ پایا جاتا ہے اور زمان کے اعتبار سے 14 صدیاں گزر چکی ہیں لیکن اسکے باوجود کربلا میں امام عالی مقام اور انکے اصحاب باوفا کے ذریعے قائم کئے گئے انسانی اقدار کی روشنی انڈونیشیا کے مختلف علاقوں میں آج بھی دکھائی ہوئی دیتی ہے ۔ ... باقی مطلب

قیام امام حسین(ع)میں نمازکی ترویج۔ مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

مسلم بن عوسجہ اورنماز: آپ نبی اکرمﷺ ،امیرالمومنین علیہ السلام ،امام حسن علیہ السلام، امام حسین علیہ السلام کے وفادار اورمخلص صحابی ہونے کے ساتھ ساتھ بہت بڑے عبادت گزارتھے۔عاشورارو روزعاشورااوردیگرمواردپر آپ کی عبادت کی طرف بعدمیں اشارہ کریں گے۔ فی الحال ایک روایت نقل کرکےآگے بڑھتے ہیں اوروہ یہ ہے کہ ابن زیادملعون جب کوفہ میں آیا اورکوفہ کے حالات سنھبالے تو دیگرامورکے علاوہ اس کیلئے ایک مہم مسئلہ جناب مسلم بن عقیل کی رہائشگاہ کاپتہ لگانا اورآپ تک رسائی حاصل کرنا تھااس نے اپنے غلام معقل کو یہ ذمہ داری سونپی جوکہ بہت زیادہ چالاک آدمی تھااب تاریخ کہتی ہے کہ یہ شخص کسی کےگھرمیں نہیں گیابلکہ سیدھامسجدکوفہ میں گیایعنی اسے معلوم تھااگرمسلم بن عقیل سے کوئی شیعہ رابطے میں ہوگااوران کابتاسکے گاتووہ وہی ہوگاجومسجدمیں آتاہوگاپس مسجدمیں داخل ہوا اورشیعوں کی جونشانیاں اورعلامات اس کے ذھن میں تھیں ان کے مطابق مسجدمیں موجود لوگوں میں سے محمدوآل محمدکے شیعہ کوڈھونڈنے لگا،اچانک اس کی نگاہ جناب مسلم بن عوسجہ پرپڑی جومسلسل نماز،رکوع،سجوداورقیام میں مشغول تھے اس نے کہاشیعہ حضرات کثرت سے نمازپڑھتے ہیں پس یہ شیعہ ہی ہوگا،لہذااس لعین نے جناب مسلم بن عوسجہ کویہ یقین دہانی کرانے کیلئے کہ گویامیں بھی آل محمدکامخلص شیعہ ہوں آپ کے ساتھ نمازپڑھناشروع کردی آپ سے بڑی خوشی سے ملااوراتنے دنوں تک مسجد میں آکرآپ کے ہمراہ کثرت سےنماز پڑھتارہاکہ جناب مسلم بن عوسجہ کویقین ہوگیاکہ یہ بھی شیعہ ہی ہے اوراس طرح سے یہ لعین جناب مسلم بن عوسجہ کے توسط سےجناب مسلم بن عقیل کاپتہ لگانے میں کامیاب ہوا۔ ... باقی مطلب

اداریہ ۔ مجلہ عشاق اہل بیت 12و 13۔ربیع الثانی 1436ھ

سلام امن اور سلامتی کا دین هے کسی کو قتل کرنے اور بے جا مارنےکا حکم نهیں دیتا هے بلکه اخوت بھائی چارگی اور انسان دوستی اسلام کا پیغام هے کیسے انسانوں پر ظلم کرنے کی اجازت دیگا جبکه اسلام میں حیوانات پر ظلم کرنا بے جا مارنا ، قتل کرنا انهیں ستانا حرام هے اور حیوانات کو کھلانا اور پلانا ضرورت کی حد تک واجب هے بلکه بعض موارد میں اگر حیوان پیاس سے هلاک هونے کا خطره هو اور پانی بهت کم هو تو وضو کے بجائے تیمم کر کے پانی اس حیوان کو پلانا چاهئے . ... باقی مطلب

تشیع کی مضبوط بنیاد۔ مجلہ عشاق اہل بیت 11-ربیع الثاني1435ھ

دین اسلام انسانوں کی ہدایت اور رہبری کیلئے خداکی طرف سے آیا ہوا آخری دین ہے اوراس کے آخری ہونے کا راز اسکے جامع اورکامل ہونے میں مضمرہے "الْيَوْمَ أَكْمَلْتُ لَكُمْ دِينَكُمْ وَأَتْمَمْتُ عَلَيْكُمْ نِعْمَتِي وَرَضِيتُ لَكُمُ الْإِسْلَامَ دِينًا"[1]
اگریہ کامل دین نہ ہوتا تو اس کو آخری بھی نہیں ہونا چاہیے تھا۔یہ دین کسی خاص مکان اورخاص زمان کے ساتھ مقید نہیں ہے بلکہ قیامت تک آنے والے تمام انسانوں کے لئے بھیجاہواہے اوراس کو دوچیزوں کے اندر خلاصہ کیاگیا ہے ایک قرآن کریم اوردو۲سری سنت نبوی ﷺ اورآپ ﷺ کی سنت کی طرف خود کتاب خدانے دعوت دی ہے " وَمَا آتَاكُمُ الرَّسُولُ فَخُذُوهُ وَمَا نَهَاكُمْ عَنْهُ فَانْتَهُوا "[2] آیت مطلق ہے کہ رسول کی اطاعت کو کسی خاص مسئلہ سے مقید نہیں کرتی ہے بلکہ تمام امورمیں آپ کی اطاعت فرض ہے ۔اسی طرح ایک دوسری آیت میں بتایا گیا ہے کہ رسول خداکی اطاعت اصل میں خود خداکی اطاعت ہے " مَنْ يُطِعِ الرَّسُولَ فَقَدْ أَطَاعَ اللَّهَ " ... باقی مطلب

حضرت زہرا (س) کی باہدف عزاداری-مجلہ عشاق اہل بیت 11-ربیع الثاني1435ھ

قرآن کریم فرماتا ہے :النَّبِىُّ اوْلى‏ بِالْمُؤْمِنينَ مِنْ انْفُسِهِمْ‏ "( احزاب/ 6) پیغمبرؐ مومنوں پر اُن کی جانوں سے بھی زیادہ حق رکھتے ہیں" پیغمبر ؐ مومنین پر اولٰی ہیں ، پیغمبرؐ کا مومنین کے جان و مال میں تصرف کا ارادہ خود ان مومنین کے ارادے پر مقدم ہے ،پیغمبر ؐکا مومنین پر حق ہے کہ جو خود مومنین کے اپنے آپ پر حق سے زیادہ ہے یعنی ہم سب اپنی جان کے مالک ہیں ، اپنی دولت کے مالک ہیں ، اپنے احترام اور عزت و آبرو کے مالک ہیں لیکن پیغمبر ؐہم پر ، ہمارے مال و دولت پر اورہماری عزت و آبرو پر مالکیت کا حق رکھتے ہیں اور پیغمبر ؐ کا یہ حق ملکیت خود ہمارے اپنے حق ملکیت سے زیادہ قوی ہے ۔ بظاہر اس کی وجہ یہ ہے کہ ہم اپنی جان اور دولت کے اس طرح مالک نہیں ہیں کہ جہاں دل چاہا وہاں اسے استعمال کر لیا حتی اپنی حقیقت کے مالک بھی نہیں ہیں بعض روایات میں ہے کہ مومن کی آبرو بھی اس کے اختیار میں نہیں ہے لیکن پیغمبر ؐمومنین کی جانوں پر اولویت رکھتے ہیں یعنی جہاں مصلحت کا تقاضا ہو وہاں مومنین کی جانوں کو بھی قربان کر سکتے ہیں ۔ ... باقی مطلب

قیام عاشوراپر ایک نظر۔ مجلہ عشاق اہل بیت 11-ربیع الثاني1435ھ

دثہ کربلا میں ایک طرف سے یزید کی امام حسین ع سے بیعت طلب کرنا اورامام کےانکار کاپہلو ہے ۔تودوسری طرف حکومت اسلامی کی تشکیل کے لئےکوفیوں کی دعوت نظر آتی ہے تو تیسری طرف امام ع خود ایک مقام پر مسئلہ بیعت اورکوفیوں کی دعوت کی طرف توجہ کیے بغیر حکومت کی پالسیوں پرجوفساد، حرام خوری اورظلم وجور سے مبنی تھی پرتنقید کرتے ہیں اوریہاں امربالمعروف نہی ازمنکرکوآپ ضروری سمجھتے ہیں اب هم نے یه دیکھنا هے که کیا یہ تینوں چیزیں حادثہ کربلا میں مؤثر تھیں یا بعض اسباب مؤثر تھیں اور اگر سب مؤثر تھیں تو سب برابر تھیں یا بعض کو بنیادی حیثیت حاصل تھی یعنی اگر دوسرے اسباب نه بھی هوتیں امام ع قیام فرماتے .؟ ... باقی مطلب

مسئله فلسطین سے آشنائی۔ مجلہ عشاق اہل بیت 11-ربیع الثاني1435ھ

فلسطین انبیاء کی سرزمین ہے۔ اور مسلمانوں کا قبلہ اول بیت المقدس بھی یہیں واقع ہے۔ یہ ابتدا سے ہی فرزندان توحید کا مرکز رہا ہے اور صدر اسلام سے مسلمانوں کے پاس تھا۔ درمیان میں عیسائیوں نے ۹۰ سال تک فلسطین پر حکومت کی،دوسری صلیبی جنگ کے آخری مراحل۱۱۴۹ء۔۱۱۴۷ء میں صلاح الدین ایوبی نے جنگ کرکے بیت المقدس کو واپس لے لیا۔ لیکن انیسویں صدی میں یہودیوں اور استعمار کی گٹھ جوڑ سے ایک ناجائز صہیونی حکومت اس منطقے پر قابض ہوگئی جو دیگر ممالک سے ہجرت کر کے آنے والے انتہا پسند یہودیوں پر مشتمل ہے۔ ان غاصبوں نے مقامی باشندوں پرظلم وستم کر کے ان کو ملک بدر کردیا اور ہزاروں افرادکا قتل عام کیا ۔ ... باقی مطلب

اسلامي تربيت كي اهميت اور اسکے اهم اصول۔مجلہ عشاق اہل بیت 11-ربیع الثاني1435ھ

قرآن وسنت کى نگاه مىں تربىت اس قدر اهم هے که قرآن مجىد نے اسے انبىاء کى بعثت کے اهداف مىں سے قرار دىا هے :چنانچه ارشادبارى تعالى هوتا هے "هُوَ الَّذِى بَعَثَ فىِ الْأُمِّيِّنَ رَسُولًا مِّنهْمْ يَتْلُواْ عَلَيهْمْ ءَايَاتِهِ وَ يُزَكِّيهِمْ وَ يُعَلِّمُهُمُ الْكِتَابَ وَ الحْكْمَةَ وَ إِن كاَنُواْ مِن قَبْلُ لَفِى ضَلَالٍ مُّبِين ‏:[1] وه خدا جس نے ناخواندہ لوگوں میں انہی میں سے رسول بھیجا جو انہیں اس کی آیات پڑھ کر سناتا ہے اور انکى تربىت کرتا ہے اور انہیں کتاب و حکمت کی تعلیم دیتا ہے جب کہ اس سے پہلے یہ صریح گمراہی میں تھے۔ پس معلوم هوا که انبىاء آئے تاکه اس خاکى انسان کو تعلىم وتربىت کے زىور سے آراسته کرکے اس مىں انسانىت کى روح پھونکر اسے عرشى اور الھى بناىا جاے ۔ چنانچه اسى اهمىت کے پىش نظر اس مختصر مقالے مىں تعلىم کے ساتھ اسلامى تربىت کى ضرورت ؛ اسلامى تربىت کےچند اهم اصولوں کو زىر قلم لانے اور همارى حالىه تعلىمى نظام مىں تربىتى بحران کے اسباب کا جا ئزه لىنے کے ساتھ ساتھ اس سے نجات دلانے کےلئے کچھ تجاویزپیش کرنےکى کوشش کى هے ۔ ... باقی مطلب

سوالات اور جوابات- مجلہ عشاق اہل بیت 11-ربیع الثاني1435ھ

سوال: جو شخص شهوت حرام میں مبتلا هو جائے اس کا علاج کیا هے؟ میں حرام شهوت میں مبتلا هو گیا هوں، جب بھی اس بری عادت کو ترک کرنا چاهتا هوں کامیاب نهیں هوتا هوں۔ جبکه میں بہت کوشش کرتا هوں اور مدتوں گھر سے باهر نهیں نکلتا هوں تاکه کسی پر نظر نه پڑے لیکن کوئی فائده نهیں هوتا۔ جب گھر پر هوتا هوں اس وقت بھی شیطانی خیالات مجھے نهیں چھوڑتی هیں۔ شیطان طاقتور هے لیکن الله بهت زیاده طاقتور هے. الله آپ پر رحم کرے۔ میری راهنمائی کریں . ... باقی مطلب

سوال بھیجیں